عدلیہ کے باہر عدلیہ مردہ باد کے نعرے لگے، ابھی صبر سے کام لے رہے ہیں،چیف جسٹس

عدلیہ کے باہر عدلیہ مردہ باد کے نعرے لگے، ابھی صبر سے کام لے رہے ہیں،چیف جسٹس

ویب ڈیسک:نا اہلی کیس کے بعد عدلیہ مردہ باد کے نعرے لگےجبکہ  خواتین کو شیلٹر کے طور پر استعمال کیا گیا،چیف جسٹس ثاقب نثار

سپریم کورٹ میں میڈیا کمیشن کیس کی سماعت چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ کر رہا ہے، جس کے دوران ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ چیئرمین پیمرا کیلئے حکومت نے 7 رکنی کمیٹی تشکیل دے دی ہے. کمیشن میں نمایاں صحافی اور چیئرمین پی بی اے کو شامل کیا گیا، کمیشن چیئرمین پیمرا کیلئے 3 ممبران کے پینل کاانتخاب کرے گا، یہ کام 3 ہفتے کے اندر ہو جائے گا۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے استفسار کیا کہ اس کام پر تو بہت وقت لگ جائے گا جس پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل رانا وقار نے کہا کہ فوری ایشو چیئرمین پیمرا کی تقرری کا ہی ہے جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ قانون کے بر خلاف ہم نے بھی کام نہیں کرنا، چیئرمین پیمرا کیلئے صاف ستھرا شخص آنا چاہیئے۔ جسٹس اعجازالاحسن نے کہا کہ پیمرا قانون کا آرٹیکل 5 بڑا اوپن ہے۔

دوران سماعت چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ عدلیہ کمزور ہوگی تو میڈیا کمزور ہو گا، اگر ہماری بات ٹھیک نہیں تو بولنا بھی بند کر دیں گے انھوں نے مزید کہا کہ قانون سازوں کو قانون میں ترمیم کے لیے تجویز نہیں دے سکتے۔

متعلقہ خبریں