Daily Mashriq

فواد چوہدری کے نوکریوں سے متعلق بیان پر وزیراعظم کا ردعمل بھی سامنے آگیا

فواد چوہدری کے نوکریوں سے متعلق بیان پر وزیراعظم کا ردعمل بھی سامنے آگیا

 اسلام آباد: وزیراعظم کی زیر صدارت پی ٹی آئی کی کور کمیٹی کے اجلاس میں وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری کے نوکریوں سے متعلق بیان کا معاملہ بھی زیر بحث آیا۔

پی ٹی آئی کی کورکمیٹی کے اجلاس کی اندرونی کہانی سامنے آگئی، اجلاس میں جہاں وزیراعظم کے مصالحتی مشن، آزادی مارچ، حکومتی کارکردگی اور دیگر اہم سیاسی امور پر بات ہوئی تو وہیں فواد چوہدری کے نوکریوں سے متعلق بیان کا بھی تذکرہ ہوا۔

وزیراعظم نےفواد چوہدری کو مخاطب کرتے ہوئے  کہا کہ سعودی عرب کے دورے میں آپ کے بیان کے متعلق معلوم ہوا، جواب میں  وفاقی وزیر نے اپنی وضاحت میں کہا کہ میرے بیان کو توڑ مروڑ کر پیش کیا گیا جس پر وزیراعظم نے ردعمل دیا کہ  ہمیں مایوسی کی باتیں نہیں کرنی چاہیے۔

دوران اجلاس وزیراعظم حکومتی ترجمانوں کی کارکردگی سے بھی ناخوش نظر آئے  ، صحیح ترجمانی نہ ہونے پر وزیراعظم نے کہا کہ ہمارا موقف میڈیا پر درست انداز میں پیش نہیں ہورہا جس  کے بعد  کور کمیٹی نے حکومتی موقف بھرپور انداز میں پیش کرنے کیلئے مختلف تجاویز پیش کیں۔

آزادی مارچ کے حوالے سے وزیراعظم نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کے مارچ کو ذیادہ اہمیت نہ دی جائے،آزادی مارچ کے متعلق کمیٹی قائم کردی،وہی معلامات دیکھے گی ہمیں دھرنے پر گفتگو سے وقت ضائع نہیں کرناچاہتے۔

کور کمیٹی نے پنجاب اور خیبرپختونخوا میں فوری بلدیاتی انتخابات کرانے کا فیصلہ بھی کیا جب کہ وزیراعظم عمران خان نے شرکا کو سعودی عرب، ایران اور چین کے دوروں پر اعتماد میں بھی لیا۔

واضح رہے کہ حکومت نے مولانا فضل الرحمان سے مذاکرات کے لیے کمیٹی بنانے کا فیصلہ کیا ہے جس کی سربراہی وزیردفاع پرویز خٹک کے سپرد کی گئی ہے۔ کمیٹی کواپوزیشن سے اس کے مطالبات پر مذاکرات کا مینڈیٹ دیا گیا ہے۔

متعلقہ خبریں