Daily Mashriq

ضلع ناظم کا احسن اقدام

ضلع ناظم کا احسن اقدام

ضلع ناظم پشاور محمد عاصم کی گزشتہ روز ایک مرکز صحت کے دورے میں غیر حاضر ڈاکٹر اور عملے کے ارکان کے خلاف تادیبی کارروائی کے اگلے روز ایک اور مرکز صحت کے دورے میں عملے کے ارکان کی موجودگی اتفاقیہ بھی ہوسکتی ہے اور ناظم پشاور کے چھاپے کے اثرات بھی۔ اس موقع پر بھی ضلع ناظم نے عوامی شکایات پر عملے کے ایک فرد کو معطل کرکے سرکاری ملازمین کو سنجیدہ پیغام دیا ہے۔ بلدیاتی نظام اور بلدیاتی نمائندوں سے عوام کی توقعات و سائل اور فنڈز کے ساتھ ساتھ دیگر وجوہات کی بناء پر پورا نہ ہونا اپنی جگہ مگر اس کے باوجود بھی ناظمین اور بلدیاتی نمائندے اگر چاہیں تو اپنے مثبت اور فعال کردار کی ادائیگی کے ساتھ عوام کی خدمت کرسکتے ہیں۔گوکہ اختیارات کا نہ ہونا اپنی جگہ مسئلہ سہی مگر اس کے باوجود بھی بلدیاتی نمائندے اس قدر سرمنڈھے نہیں کہ ان کی بات کا نوٹس نہ لیا جائے۔ بلدیاتی نمائندوں کی اکثریت کو اپنے اختیارات و کردار کا علم ہی نہیں اور جن کو علم ہے بدقسمتی سے وہ اس کا مثبت استعمال نہیں کرتے۔ ایسے کاموں میں ملوث ہو جاتے ہیں جس میں عوام کے مفادات کے تحفظ کی بجائے عوام کے مفادات کو زک پہنچتا ہے۔ بلدیاتی نمائندوں اور ناظمین اگر بیکار مباش کچھ کیا کر کا طریق اپنائیں تو سرکاری اداروں میں عملے کی کارکردگی سکولوں اور مراکز صحت میں حاضری' تدریس و علاج کا جائزہ لینے جیسے بنیادی عوامی مفاد کے حامل مثبت کام انجام دے سکتے ہیں۔ ضلع ناظم پشاور اگر اپنے دیگر ساتھی ٹائون ناظمین وغیرہ کو بھی اس کام کے لئے متحرک کریں تو سرکاری عملے کو جوابدہی کا احساس ہوگا اور وہ حاضری ہی یقینی بنانے کی نہیں بلکہ اس امر کی بھی سعی کریں گے کہ عوام کو ان سے شکایات پیدا نہ ہوں۔ بلدیاتی نمائندے اگر خلوص نیت کے ساتھ ایسا کریں گے تو اس کا خیر مقدم کیاجائے گا لیکن اس کی آڑ میں اختیارات کا غلط استعمال اور کسی چپقلش اور پسند و ناپسند اور بد نیتی پر کسی دفتر کا نہ تو معائنہ کیا جائے اور نہ ہی کسی کے خلاف کارروائی ہونی چاہئے۔

متعلقہ خبریں