Daily Mashriq

سوات، دیر اور چترال میں سیلابی ریلے کا خدشہ ،ہائی الرٹ جاری

سوات، دیر اور چترال میں سیلابی ریلے کا خدشہ ،ہائی الرٹ جاری

پشاور(سپیشل رپورٹر)محکمہ بحالی و آبادکاری نے سوات، دیر اور چترال میں سیلابی ریلے کا خدشہ ظاہرکرتے ہوئے وزیر اعلیٰ محمود خان سمیت کمشنر ملاکنڈ ڈویژن اور متعلقہ اضلاع کے ڈپٹی کمشنر کو آگاہ کرتے ہوئے ہائی الرٹ جاری کردیا گلیشئر پگھلنے سے دریائے سوات میں طغیانی آنے اور پانی کی سطح بلند ہونے سے قریبی علاقے زیر آب آنے کی رپورٹ تیار کرتے ہوئے عوام کو محفوظ مقامات کو منتقل کرنے کی ہدایتکردی گئی جبکہ سیلاب کی زد میں آنے والے علاقوں کے عوام کومساجد سے لائوڈ سپیکر کے ذریعے محفوظ مقام پر منتقل کرنے سے متعلق آگاہی بھی دی گئی محکمہ نے سیلاب صورتحال کے پیش نظر بعض علاقوں میں غذائی قلت کا بھی خدشہ ظاہر کیا ہے جبکہ اس کے علاوہ ضلعی انتظامیہ کو بھی ہدایت کی گئی ہے کہ عوام کو محفوظ مقامات پر منتقل کرنے میں کردار ادا کرے پی ڈی ایم اے نے سوات کے علاقہ گبرال کے گائوں جامرہ میں مکانات، باغات ، دفاتر، تعلیمی اداروں اور مراکز صحت کو سیلابی ریلے میں بہہ جانے کا خدشہ ظاہر کیا ہے جبکہ سینکڑوں گائوں کی آبادی کو بھی سیلاب کی زد میں آنے کا خطرہ ظاہر کیا گیا ہے گبرال سے اتروڑ تک ایک کلو میٹر شاہراہ کو سیلاب سے شدید نقصان پہنچا ہے پی ڈی ایم اے نے سیلاب سے شاہراہ کو نقصان پہنچنے اور بڑی گاڑیوں کی آمد رفت ممکن نہ ہونے کی وجہ سے ان علاقوں میں غذائی قلت کا خدشہ ظاہر کیا ہے محکمہ بحالی و آباد کاری کی جانب سے حکومت ، متعلقہ اداروں اور حکام کو تجویز دی گئی ہے کہ محکمہ آبپاشی کی جانب سے جامرہ کے قریب سیلابی پانی کا رخ موڑنے سے مکانات، باغات اور شاہراہ کو بڑے نقصان پہنچنے سے بچا جا سکتا ہے محکمہ بحالی و آباد کاری نے ممکنہ سیلابی صورتحال کے پیش نظر وزیر اعلیٰ محمود خان، کمشنر ملاکنڈ ڈویژن، ڈپٹی کمشنر سوات، ڈپٹی کمشنر دیر اپر، ڈپٹی کمشنر دیر لوئر اور ڈپٹی کمشنر چترال کو ہائی الرٹ جاری کرتے ہوئے پیشگی اقدامات اٹھانے کی ہدایت کر دی ہے ۔

متعلقہ خبریں