Daily Mashriq

چیف جسٹس نے ذہنی بیمار قیدی کی پھانسی روک دی

چیف جسٹس نے ذہنی بیمار قیدی کی پھانسی روک دی

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ذہنی بیمار قیدی غلام عباس کی پھانسی روک دی۔

غلام عباس کو 18 جون کو تختہ دار پر لٹکایا جانا تھا۔

ملکی اور بین الاقوامی سطح پر پاکستانی قیدیوں کے لیے کام کرنے والے غیر سرکاری تنظیم (این جی او) جسٹس پراجیکٹ پاکستان (جے پی پی) نے غلام عباس کی پھانسی کے خلاف سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی تھی۔

چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے درخواست پر حکم سناتے ہوئے ذہنی بیمار قیدی غلام عباس کی سزائے موت پر عملدرآمد روک دیا۔

جسٹس پراجیکٹ پاکستان نے محکمہ داخلہ پنجاب کی جانب سے آزاد ماہر نفسیات اور دو سرکاری ڈاکٹروں کو اڈیالہ جیل میں غلام عباس کی جانچ کے لیے دی گئی اجازت واپس لینے کے بعد سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی تھی۔

واضح رہے کہ پڑوسی کو چُھڑی کے وار سے قتل کرنے کے جرم میں غلام عباس 2004 سے جیل میں سزا کاٹ رہا ہے اور انہیں 31 مئی 2006 کو ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ نے سزائے موت سنائی تھی۔

وہ جیل میں 13 سال سے زائد قید کی سزا کاٹ چکے ہیں اور حال ہی میں صدر مملکت کو ان کے لیے رحم کی اپیل دائر کی گئی تھی۔

متعلقہ خبریں