Daily Mashriq

قابل تقلید اقدام

قابل تقلید اقدام


قومی وطن پارٹی کی خصوصی نشست کے اپنے منحرف ممبر خیبر پختونخوا اسمبلی کو وفاداری تبدیل کرنے پر شوکاز نوٹس جاری کرتے ہوئے سات دنوں کے اندر وضاحت طلبی سنجیدہ اقدام ہے۔پارٹی کے سیکرٹریٹ سے جاری ہونے والی ایک پریس ریلیز کے مطابق مذکورہ رکن اسمبلی نے الیکشن قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے دوسری سیاسی جماعت میں شمولیت اختیار کی ہے جس کی بنا پر ان کے خلاف شوکاز نوٹس جاری کیا گیا جس میں سات دنوں کے اندر اندر جواب داخل کرنے کا کہا گیا ہے ۔ہم سمجھتے ہیں کہ ہر سیاسی جماعت کے سربراہ کا حق بنتا ہے کہ وہ منحرف ہونے پر اپنے رکن اسمبلی کے خلاف کارروائی کرے۔ ہمارے تئیں تحریک انصاف کو بھی اپنے ان اراکین کے خلاف اس قسم کے سنجیدہ اور عملی اقدام کی ضرورت ہے جنہوں نے تحریک انصاف کے سینیٹ کے امیدواروں کو ووٹ نہ دے کر عملی طور پر جماعتی نظم و ضبط کو توڑا۔ جمعیت علمائے اسلام (ف) بھی اپنے امیدوار سے مبینہ غداری کے مرتکبین کے خلاف تحقیقات کر رہی ہے جبکہ تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان کی جانب سے منحرف اراکین کے خلاف فوجداری مقدمات درج کرانے کے اعلان کے باوجود خاموشی معنی خیز ہے۔ یہ درست ہے کہ کسی رکن اسمبلی پر قانونی طور پر اس قسم کا الزام ثابت کرنا مشکل ہے لیکن قرآن پر حلف اٹھانے اور طلاق کی صورت میں جو فوری موثر اور ناقابل انحراف طریقہ کار موجود ہے اسے اختیار کرنے میں حرج نہیں تاکہ الزام لگانے والوں کے الزام کی حقیقت اور گنہگار و بے گناہ سامنے آئے۔ گو کہ یہ طریقہ اختیار کرنا آسان نہیں اور اس عمل سے گزرنا بھی خاصا مشکل ہے لیکن جو لوگ حقیقی معنوں میں اپنی بے گناہی کا یقین دلانے کے خواہاں ہوں ان کے لئے یہ مشکل نہیں۔ تحریک انصاف کی قیادت کو اپنے اراکین کے بکائو مال ثابت ہونے پر پارٹی کے دامن پر لگے داغ کو دھونے کے لئے قابل قبول عمل کرنا ہوگا تاکہ اس کوآ ئندہ عام انتخابات میں مخالفین کے طنز و الزامات اور کارکنوں کی بے یقینی اور بد دلی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ صوبے میں جس تطہیری اقدامات کی تحریک انصاف داعی رہی ہے اگر خود اس کا عمل ان دعوئوں کے برعکس نکلے تو پھر اس کے اثرات سے خود اس کامتاثر ہونا عجب نہ ہوگا۔

اداریہ