Daily Mashriq

وزیراعظم کا لاہور ہائیکورٹ کےفیصلے کا جائزہ لینے کاحکم

وزیراعظم کا لاہور ہائیکورٹ کےفیصلے کا جائزہ لینے کاحکم

وزیراعظم عمران خان نے حکومتی قانونی ٹیم کو نواز شریف سے متعلق لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کا تفصیلی جائزہ لینے کی ہدایت کردی ہے۔ قانونی ٹیم کابینہ میں رپورٹ پیش کرے گی جہاں اگلا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔

لاہور ہائیکورٹ نے گزشتہ روز شہباز شریف کی ضمانت پر میاں نواز شریف کو 4 ہفتے کیلئے علاج کی غرض سے بیرون ملک جانے کی اجازت دے دی ہے جبکہ حکومت نے گارنٹی کے طور پر میاں نواز شریف پر 7 ارب روپے کی شرط عائد کی تھی۔

لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کے بعد حکومت کے 7 ارب کی شرط غیر موثر ہوگئی جس پر وزیراعظم نے اپنی قانونی ٹیم سے رابطہ کرتے ہوئے ہدایت کی ہے کہ نوازشریف سے متعلق لاہورہائیکورٹ کے فیصلے کا تفصیلی جائزہ لیاجائے۔

وزیرعظم نے قانونی ٹیم کو ہدایت کی ہے کہ فیصلے کا جائزہ لے کر کابینہ میں رپورٹ پیش کی جائے۔ اس رپورٹ کی روشنی میں کابینہ کے اجلاس میں نواز شریف کی بیرون ملک روانگی سے متعلق لائحہ عمل تشکیل دیا جائے گا۔

دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فیصل جاوید نے کہا ہے کہ کسی کو کوئی این آر او نہیں مل رہا۔ عمران خان نے جو وعدہ کیا وہ پورا کریں گے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر فیصل جاوید نے کہا کہ ’ ڈیلیں تو راتوں رات ہو جاتی تھیں۔ اس معاملے میں تو آپ یہ دیکھیں کہ کتنا ٹرانسپیرنٹ رکھا ہے ساری چیز کو- عمران خان کبھی آپ کو مایوس نہیں کریں گے۔ جو انہوں نے وعدہ کیا ہے وہ پورا کریں گے۔ کسی کو کوئی این آر او نہیں مل رہا- جو پوری زندگی عمران خان نے کہا وہ بالآخر کر کے دکھایا۔

فیصل جاوید کے مطابق ’حکومت نے بھی یہ کہا کہ نواز شریف بغیر ضمانت دیے باہر نہیں جاسکتے۔ عدالت نے بھی فیصلہ دیا کہ بغیر ضمانت دیے باہر نہیں جاسکتے بلکہ عدالت نے تو زیادہ سخت شرائط کردی دیں۔‘

انہوں نے کہا کہ ’ہمیں عمران خان کی قیادت میں ملک کو آگے لے کے جانا ہے وزراء عمران خان کے وژن کے مطابق کام کرتے رہیں منزل قریب ہے اور حسین ہے۔

متعلقہ خبریں