Daily Mashriq


مشہور ادیب اور ڈراما نگار منیر احمد قریشی عرف منو بھائی طویل علالت کے بعد انتقال کر گئے۔

مشہور ادیب اور ڈراما نگار منیر احمد قریشی عرف منو بھائی طویل علالت کے بعد انتقال کر گئے۔

مشہور ادیب اور ڈراما نگار منیر احمد قریشی عرف منو بھائی طویل علالت کے بعد انتقال کر گئے۔ 

ویب ڈیسک : منو بھائی کئی روز سے پھیپڑوں کے مرض میں مبتلا تھے، آج صبح  طبیعت زیادہ بگڑنے پر وہ اپنے خالق حقیقی سے جا ملے ان کی نماز جنازہ  بعد نماز عصر لاہور میں ادا کر دی گئی۔منیر احمد قریشی  6 فروری 1933 کو وزیر آباد میں پیدا ہوئے۔  وزیرآباد سے 1947 میں میٹرک کرنے کے بعد وہ گورنمنٹ کالج کیمبل پور (اٹک) آ گئے۔ 7 جولائی 1970 کو اردو اخبار میں ان کا پہلا کالم شائع ہوا ۔ جس کے بعد انہوں نے مختلف اخبارات میں ہزاروں کالم لکھے۔ غربت، عدم مساوات، سرمایہ دارانہ نظام، خواتین کا استحصال اور عام آدمی کے مسائل منو بھائی کے کالموں کے موضوعات تھے۔انہوں نے پی ٹی وی کے لیے سونا چاندی، جھوک سیال، دشت اور عجائب گھر جیسےلازوال ڈرامے تحریر کیے۔منو بھائی کے انتقال پر وزیرا علیٰ پنجاب شہباز شریف نے ان کے اہل خانہ سے دلی ہمدردی اور اظہار تعزیت کا اظہار کیا ہے۔منیر احمد قریشی کو منو بھائی کا نام  احمد ندیم قاسمی نے دیا۔

متعلقہ خبریں