اسلام آباد ہائی کورٹ کا اسحاق ڈار کیخلاف احتساب عدالت کی کارروائی روکنے کا حکم۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کا اسحاق ڈار کیخلاف احتساب عدالت کی کارروائی روکنے کا حکم۔

ویب ڈیسک:اسلام آباد ہائی کورٹ نے احتساب عدالت کو اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثے بنانے کے ریفرنس پرمزید کارروائی سے روک دیا۔

جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب پر مشتمل اسلام آباد ہائی کورٹ کے دو رکنی بینچ نے وفاقی وزیر اسحاق ڈار کے خلاف احتساب عدالت کی جانب سے وارنٹ گرفتاری اور اشتہاری قرار دینے کے خلاف درخواست کی سماعت کی۔

سماعت کے دوران اسحاق ڈار کے وکیل قاضی مصباح ایڈووکیٹ نے مؤقف اختیار کیا کہ اسحاق ڈار بیمار ہیں اور لندن میں زیر علاج ہیں جب کہ مؤکل کا میڈیکل سرٹیفکٹ بھی احتساب عدالت میں پیش کیا گیا اس کے باوجود ان کے خلاف کارروائی جاری ہے۔

وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ اسحاق ڈار کی عدم حاضری میں احتساب عدالت میں شہادتیں ریکارڈ کرنے کا سلسلہ جاری ہے، اس لئے احتساب عدالت کو کارروائی سے روکا جائے۔

اس موقع پر نیب پراسیکیوٹر عمران شفیق نے کہا کہ ملزم کو ایسی کوئی بیماری نہیں جس پر وہ پاکستان واپس نہ آسکے، ضابطہ فوجداری کے تحت ملزم کے خلاف شہادتیں قلمبند کرانے کا سلسلہ جاری ہے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد احتساب عدالت کو 17 جنوری تک اسحاق ڈار کے خلاف کارروائی روکنے کا حکم امتناع جاری کردیا۔

ٹاپ سٹوری