Daily Mashriq


سپریم کورٹ کیجانب سے اینکر پرسن شاہدمسعودکے پروگرام پر 3ماہ کی پابندی

سپریم کورٹ کیجانب سے اینکر پرسن شاہدمسعودکے پروگرام پر 3ماہ کی پابندی

ویب ڈیسک:سپریم کورٹ نےاینکر ڈاکٹر شاہد مسعود کو 3 ماہ کے لیے آف ایئر کردیا، پروگرام پر 3 ماہ کی پابندی عائد ۔

سپریم کورٹ میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے زینب قتل کیس میں اینکر شاہد مسعود کے الزامات سے متعلق کیس کی سماعت کی۔

 چیف جسٹس نے اینکر شاہد مسعود پر برہمی کا اظہارکرتے ہوئے ریمارکس دیےکہ پروگرام میں دوسرے دن بھی میرے کورٹ آفیسر کی تضحیک کی، میرے لاء آفیسر کی تذلیل کرنے کی آپ کی ہمت کیسے ہوئی، آپ اپنے آپ کو کیا سمجھتے ہیں، آپ کا یہ کیا طریقہ ہے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ لگتا ہے ڈاکٹر شاہد مسعود کو بڑوں کی نصیحت کا احساس نہیں، ہوسکتا ہے شاہد مسعود کیخلاف توہین عدالت کی کارروائی کریں جس پر اینکر شاہد مسعود کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ جے آئی ٹی نے بہت سے پہلوؤں پر تحقیقات نہیں کی۔

 سپریم کورٹ نے اینکر ڈاکٹر شاہد مسعود کو 3 ماہ کے لیے آف ایئر کرتے ہوئے ان کے پروگرام پر 3 ماہ کے لیے پابندی عائد کردی۔شاہد مسعود کے وکیل نے کہا کہ عدالت کا احترام ضروری ہے، ڈاکٹر شاہد مسعود نا صرف غیر مشروط معافی مانگنے کو تیار ہیں بلکہ اپنے ٹاک شو میں بھی غیر مشروط معافی مانگیں گے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ یہ کہتے تھے مجھے پھانسی دیدی جائے تاہم ہم آپ کو پھانسی نہیں دیں گے، ہم آپ کی وڈیوزعدالت میں چلاتے ہیں، شاہد مسعود کی پکار پر ہی قاضی آیا تھا، ہر مظلوم کی پکار پر آئیں گے لیکن ڈاکٹر شاہد مسعود نے پروگرامز میں جو کہا اس پر خود ہی اپنی سزا تجویز کر لیں۔

متعلقہ خبریں