Daily Mashriq


پشاور میں موبائل نہ دینے پر انجینئرنگ کا طالبعلم قتل

پشاور میں موبائل نہ دینے پر انجینئرنگ کا طالبعلم قتل

پشاور میں تھانہ پشتخرہ کی حدود میں وزیرستان سے تعلق رکھنے والے ذیشان نامی طالبعلم کو موبائل چھیننے کے دوران مزاحمت پر مسلح ملزمان نے فائرنگ کرکے قتل کر دیا ۔

ترجمان پشاور پولیس کے مطابق تھانہ پشتخرہ کی حدود میں ذیشان نامی طالبعلم جو کہ مقامی نجی یونیورسٹی میں زیر تعلیم تھا کو نامعلوم ملزمان نے فائرنگ کرکے شدید زخمی کر دیا تھا جسے فوری طور پر ابتدائی طبی امداد کی خاطر اسپتال منتقل کر کیا گیا تاہم مجروح طالب علم زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا، جب کہ پولیس نے نامعلوم ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کر دی ہے۔

مقتول ذیشان کا تعلق شمالی وزیرستان سے تھا اور وہ پشاور میں اقراء یونیورسٹی میں مکینیکل انجنیئرنگ میں دوسرے سمسٹر میں پڑھ رہا تھا اور ایک پرائیویٹ ہاسٹل میں مقیم  تھا۔

واقعے پر اے ایس پی حیات آباد نجم اور ایس ایچ او پشتخرہ پر مشتمل خصوصی ٹیم بنا دی ہے جو کہ جلد ملزمان کی گرفتاری کے حوالے سے کاروائی کرے گی ، اے ایس پی حیات آباد نجم الحسن کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ پولیس نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے علاقے میں سرچ آپریشن شروع کیا ہے جلد ملزمان کو گرفتار کر لیا جائیگا۔

متعلقہ خبریں