Daily Mashriq


پاناما کیس اور حدیبیہ ریفرینس کو منسلک نہ کریں، اٹارنی جنرل کی سپریم کورٹ سے استدعا

پاناما کیس اور حدیبیہ ریفرینس کو منسلک نہ کریں، اٹارنی جنرل کی سپریم کورٹ سے استدعا

ویب ڈیسک: اٹارنی جنرل اشتر اوصاف نے سپریم کورٹ سے استدعا کی ہے کہ   پاناما لیکس کیس اور حدیبیہ ریفرنس کو ایک دوسرے سے منسلک نہ کیا جائے، کیونکہ دونوں کی نوعیت میں فرق ہے۔یاد رہے کہ گذشتہ روز عدالت عظمیٰ نے اٹارنی جنرل سے استفسار کیا تھا کہ کیا عدالت کو حدیبیہ پیپر ملز کیس میں مداخلت نہیں کرنی چاہیئے؟

اور کیا 1.2 ارب کی بدعنوانی کا معاملہ بغیر حساب کتاب جانے دیا جائے؟

جس پر اٹارنی جنرل کا کہنا تھا کہ ان کی یہی رائے ہے اور اگر عدالت فیصلہ دیتی ہے تو یہ ایک بری مثال بن جائے گی۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 5 رکنی بینچ نے جب سماعت کا آغاز کیا تو اٹارنی جنرل اشتر اوصاف نے آج بھی اپنے دلائل جاری رکھے۔ اٹارنی جنرل نے بتایا کہ عدالت نے گزشتہ روز اپیل دائر کرنے کے حوالے سے سوال پوچھا تھا، کیس کے ریکارڈ کا جائزہ لیا ہے، قرضہ فارن کرنسی اکاؤنٹس پر لیا گیا تھا۔جس پر جسٹس شیخ عظمت سعید نے ریمارکس دیئے کہ 'اگر کوئی سٹوری بنائی بھی ہے تو اس پر قائم رہیں، ہر وکیل الگ بات کر کے کنفیوژ کر دیتا ہے'۔

متعلقہ خبریں