Daily Mashriq


پارٹی صدارت سے متعلق سپریم کورٹ کا فیصلہ غیر متوقع نہیں،نوازشریف

پارٹی صدارت سے متعلق سپریم کورٹ کا فیصلہ غیر متوقع نہیں،نوازشریف

ویب ڈیسک:الیکشن اصلاحات کیس میں سپریم کورٹ کا فیصلہ غیر متوقع نہیں ہے،اب آئین کی کوئی شق نکال کر میرا نام بھی چھین لیں، نواز شریف

احتساب عدالت کے باہر میڈیا نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے نواز شریف کا کہنا تھا کہ عدالتوں نے اس قبل حکومت کو مفلوج کرتے ہوئے ایگزیکٹیو کو نااہل قرار دے دیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے چند روز قبل پارلیمنٹ میں جبکہ دیگر مواقوں پر وزیرمملکت مریم اورنگزیب اور وزیر داخلہ احسن اقبال نے بھی اس ہی طرح کے ردِ عمل کا اظہار کیا تھا۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ 28 جولائی 2017 کا جو فیصلہ تھا اس میں وزارتِ عظمیٰ چھین لی گئی، 21 فروری 2018 کے فیصلے میں مجھ سے پارٹی کی صدارت بھی چھین لی گئی۔

انہوں نے تنقید کرتے ہوئے کہا کہ میرے پاس اب میرا نام ’محمد نواز شریف‘ باقی رہ گیا ہے، آئین میں شق نکال کر وہ بھی مجھ سے چھیننا چاہتے ہیں تو چھین لیں۔

نواز شریف نے کہا کہ اگر میرا نام چھیننے کے لیے آئین میں کوئی شق نہیں ملتی تو ’بلیک لا ڈکشنری‘ کی مدد لے کر میرا نام چھین لیں۔

متعلقہ خبریں