Daily Mashriq

والدین اوراساتذہ کرام کی ذمہ داری

والدین اوراساتذہ کرام کی ذمہ داری


آئے روز نوجوانوں کے اندھے قتل کے واقعات اور بعد از تفتیش اپنے ہی دوستوں کا اس میں ملوث ہونا اور افسوسناک حد تک ناجائزمطالبے اور تنگ کرنا اس کی وجہ قرار پانا لمحہ فکریہ ہے ۔ اسے المیہ ہی گردانا جائے گا کہ اس طرح کے واقعات اور وارداتیں ہمارے معاشرتی اور اخلاقی انحطاط و گراوٹ کا بد ترین نمونہ ہیں ۔ گرتے اخلاقی اقدار کوسدھارنا اور اپنے بچوں کی تعلیم و تربیت اور ان کی سرگرمیوں پر نظر رکھنے کی والدین کی بنیادی ذمہ داری ہے جس میں غفلت پچھتا وے اور نو ر چشم گنوانے کی صورت میں سامنے آتا ہے۔ ہم میں سے ہر ایک کو ان واقعات سے عبرت حاصل کرنی چاہیئے اور اولاد کی اصلاح اور معاشرتی اقدار کی تحفظ میں اپنا کردار ادا کرنے پر توجہ دینی چاہیئے اساتذہ کرام کو بھی اس ضمن میں خصوصی کردار ادا کرنا ہوگا ۔


وائی فائی کی سہولت نگرانی کے نظام کے ساتھ دی جائے
ایک منصوبے کے تحت پشاور یونیورسٹی اور صوبے کے پچیس سرکاری کا لجوں میں وائی فائی کی سہولت کی فراہمی کی مخالفت نہیں کی جاسکتی بلکہ اس کے مثبت استعمال کی شرط پر یہ احسن اقدام ہوگا ہماری تجویز ہوگی کہ وائی فائی کی اس سہولت کو تکنیکی طور پر اس طرح سے فراہمی کو یقینی بنایا جائے کہ طلباء اور بعض اساتذہ کرام اس کو شغل کے طور پر استعمال کر کے وقت گزاری اور وقت کے ضیا ع کے مرتکب نہ ہو جائیں بلکہ اس کو علم و تحقیق کیلئے استعمال کریں ۔ اس سہولت کو عام کرنے کی بجائے اگر لائبریری اور کسی مقررہ جگہ پر فراہمی کا بندوبست کیا جائے جہاں نگرانی کے نظام میں طلبہ اس سہولت سے استفادہ کریں تو اس کے منفی اور وقت گزاری کے استعمال میں حوصلہ شکنی ممکن ہوگی ۔توقع کی جانی چاہیئے کہ ایسی منصوبہ بندی کی جائے گی کہ طلباء اس سہولت سے مستفید تو ہو سکیں مگر اسے وقت گزاری کیلئے بروئے کار نہ لا سکیں ۔

اداریہ