Daily Mashriq

وزیراعظم اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 74ویں اجلاس میں پاکستانی وفد کی قیادت کرینگے

وزیراعظم اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 74ویں اجلاس میں پاکستانی وفد کی قیادت کرینگے

وزیراعظم عمران خان نیویارک میں ہیں جہاں وہ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 74ویں اجلاس میں پاکستانی وفد کی قیادت کریںگے جہاں کشمیر کا معاملہ ان کے ایجنڈے میں سرفہرست ہوگا۔

اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ڈاکٹر ملیحہ لودھی امریکہ میں پاکستان کے سفیر اسد مجید خان اور اقوام متحدہ میں پاکستانی مشن اور قونصل خانے کے عہدیداروں نے نیویارک کے کینیڈی انٹرنیشنل ائیرپورٹ پر ان کا خیر مقدم کیا۔

وزیراعظم آئندہ جمعہ کو ایک سو ترانوے رکنی جنرل اسمبلی سے خطاب میں تنازعہ کشمیر کے حوالے سے پاکستان کا موقف اور مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی موجودہ صورتحال اور اسکے مختلف پہلوئوں پر روشنی ڈالیںگے۔

عمران خان دنیا بھر کے رہنمائوں کے سب سے بڑے اجتماع سے خطاب میں اہم عالمی اور علاقائی امور پر بھی پاکستان کا موقف پیش کریںگے۔

وہ مقبوضہ کشمیر کی بگڑتی ہوئی صورتحال خصوصا پانچ اگست کے بعد سے وہاں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کی جانب بھی عالمی برادری کی توجہ مبذول کرائیںگے جب بھارتی وزیراعظم نریندرمودی نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے بھارت کے ساتھ اسکے الحاق کا اعلان کیاتھا۔

وزیراعظم عمران خان عالمی برادری او راقوام متحدہ پر زور دیںگے کہ وہ سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں کے مطابق جموں کشمیر کے عوام کو ان کا حق خودارادیت دلوانے کا اپنا وعدہ پورا کرے۔

وزیراعظم عمران خان اپنے سات روزہ دورے کے دوران امریکہ کے صدرڈونلڈٹرمپ، موسمیاتی تبدیلی، پائیدار ترقی، عالمی سطح پر صحت کی سہولتوں کی فراہمی اور ترقی کیلئے سرمائے کی فراہمی سے متعلق اقوام متحدہ کے اعلی سطح کے سربراہ اجلاسوں کے شرکاء سمیت متعدد دوطرفہ ملاقاتیں کریںگے۔

وزیراعظم اپنے اس دورے کے موقع پر پاکستان اور ترکی کے اشتراک سے نفرت انگیز تقاریر کے خاتمے اور ملائیشیا اور پاکستان کے اشتراک سے ماحول کے تحفظ اور غربت کے خاتمے کے بارے میں اعلی سطح کی تقاریب میں شرکت اور اظہار خیال کریںگے۔

جنرل اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر پاکستان، ملائیشیا اور ترکی کا سہ فریقی سربراہ اجلاس بھی ہوگا۔

وزیراعظم ان مصروفیات کے علاوہ عالمی ذرائع ابلاغ کے ادارتی بورڈز کے عہدیداروں اور صحافیوں سے ملاقاتیں کریںگے۔

خارجہ تعلقات کے بارے میں کونسل اور ایشیاء سوسائٹی اور انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کے نمائندوں کے ساتھ ملاقاتوں سمیت ممتاز تھنک تھنک ٹینکس سے خطاب بھی وزیراعظم کی مصروفیات میں شامل ہیں۔وزیراعظم کے دورے سے پاکستان کی اقوام متحدہ کے منشور کی پاسداری، بین الاقوامی قوانین اور کثیرالجہتی شراکت میں تعاون سے متعلق عزم کو مزید تقریت ملے گی۔

متعلقہ خبریں