Daily Mashriq


کس کو ووٹ دیں؟

کس کو ووٹ دیں؟

۲۵جولائی کو وطن عزیز کے 21 کروڑ عوام قانون ساز اسمبلیوں کے امیدواروں کا چنائو کریں گے۔ بد قسمتی سے جب ہم کسی کو اچھے ، اسلام پسند، دیانت دار اور ایماندار امیدوار کو ووٹ دینے اوراس بات پر آمادہ کرنے کی کو شش کرتے ہیں کہ دیانت دار محب وطن اور ایماندار امیدوار کو اپنا قیمتی ووٹ دیں تووہ آگے سے Sorry کر کے کہتا ہے کہ ہمارے خاندان یا قبیلے کا فلاں امیدوار الیکشن میں حصہ لے گا اور ہم نے اپنا ووٹ اُسی کو دینا ہے۔ 21کروڑپاکستانی بجلی و گیس لو ڈ شیڈنگ ، مہنگائی، بے روز گاری اور لاقانو نیت کا رونا رورہے ہیں۔ ہمارے یہ مسائل اُن بد عنوان اوربد دیانت حکمرانوں کی وجہ سے ہے۔ جن کوہم خود اپنے ووٹ سے منتخب کرکے قومی اور صوبائی اسمبلیوں میں پہنچا کر اپنے اوپر مسلط کرتے ہیں ۔ اسلام میں ذات پات اور قبیلے کی کوئی اہمیت نہیں۔ سورۃ الحجرات میں ار شاد ہے اللہ کے نزدیک سب سے زیادہ عزت والا وہ ہے جو تُم میں سب سے زیادہ متقی اور پر ہیزگار ہے۔ ارشاد خداوندی ہے، لوگو ہم نے تم کو ایک مرد اور ایک عورت سے پیدا کیا اورتمہیں قبیلوں اور قوموں میں تقسیم کیا تاکہ تم ایک دوسرے کو پہچانو ۔زیادہ تر لوگوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ میرا دادا یا والد فلاں پا رٹی میں تھا،یا ہے، لہٰذا ہم بھی اپنے باپ دادا کی پا رٹی نہیں چھوڑ سکتے ۔سورۃ البقرہ میں ارشاد ہے اور جب ان لوگوں سے کہا جاتا ہے کہ جو کتاب اللہ تعالیٰ نے نازل فر مائی ہے اسکی پیروی کرو،تو وہ کہتے ہیں۔۔ نہیں۔۔ بلکہ ہم تو ایسی چیز کی پیروی کریں گے جس پر ہم نے اپنے باپ دادا کو پایا۔بھلا اگرچہ انکے باپ دادا نہ کچھ سمجھتے ہوں اور نہ سیدھے رستے پر ہوں۔ تب بھی انکی تقلید کئے جاتے ہیں۔پاکستان کے غریبوں کومعلوم ہونا چاہئے کہ ان وڈیروں نے انکی قسمت نہیں بدلنی، بلکہ انہوں نے اپنی قسمت خود بدلنی ہوگی۔سورۃ الرعد میں ارشاد ہے، اللہ کسی قوم کی حالت نہیں بدلتا جب تک وہ اپنی حالت خود نہ بدلے۔اسمیں کوئی شک نہیں کہ ہمارے ملک میں آئیڈیل جمہوری اور اسلامی نظام موجود نہیں مگر اسکے باوجود بھی ہم نے اپنی بساط کے مطابق اچھائی کا ساتھ دینا اور ظلم اور جبر کے خلاف کھڑا ہونا ہے۔ سورۃ انعام آیت نمبر 165 میں ارشاد ہے اور وہی تو ہے جس نے زمینمیں تُم کو اپنا نائب بنایا اور ایک کے دوسرے پر درجے بلند کئے تاکہ جو کچھ اس نے تمہیں بخشا ہے اس میںتمہاری آزمائش کرے۔ رسول اللہؐ کا ارشاد ہے خبر دار رہو تم میں سے ہر ایک نگہبان ہے اور ہر ایک سے اس کی رعیت کے بارے میں پو چھا جائے گا ۔ جہاں تک اچھی لیڈر شپ کا تعلق ہے تو ہمیں اُ ن لوگوں کو منتخب کرنا چاہئے جو قُر آن ، احادیث اور اسلامی اصو لوں پر کسی حد تک عمل پیرا ہوںاور مذہبی اور دنیاوی علوم دونوں سے با خبر ہوں ۔ سورۃ المائدہ میں ارشاد ہے بے شک تمہارے پاس اللہ کی طر ف سے نور اور روشن کتاب آچکی ہے۔ سورۃ الاحزاب میں ارشاد ہے اور آپکے لئے حضور ﷺ کی زندگی ایک بہترین نمو نہ ہے۔ ایک منتخب نمائندے کا علم، عقل اور تجربہ عام لوگوں سے زیادہ ہونا چاہئے۔ کیونکہ اس کے منصب کا تقاضا یہ ہے کہ وہ عام لوگوں سے عقل ، فہم اور دانش کا زیادہ مالک ہو۔سورہ الزمر آیت نمبر9میں ارشادہے کہو بھلا جو لوگ علم رکھتے ہیں اور جو علم نہیں رکھتے ،کیا دونوں برابر ہو سکتے ہیں۔ پس تو نصیحت تو وہی حا صل کرتے ہیں جو عقل مند ہو۔ جہاں تک عقیدے کی بات ہے اللہ تعا لیٰ سورۃ بقرہ میں ارشاد فرماتے ہیں جو لو گ ایمان لائے ہیں اُنکا دوست اللہ ہے۔ کوئی بھی لیڈر راسخ لعقیدہ ہونا چاہئے اور دنیاوی ، مذہبی اور عصری علوم کے بارے میں جانتا ہو۔رسول اللہ ﷺ کا ارشاد ہے کوئی حا کم جو مسلمانوں کی حکومت کا کوئی منصب سنبھالے پھراس کی ذمہ داریاں ادا کرنے کے لئے جان نہ لڑائے اور خلوص کے ساتھ کام نہ کرے وہ مسلمانوں کے ساتھ جنت میں قطعاً داخل نہیں ہوگا۔نبی ﷺ نے حضرت ابوذر ؓسے فر مایا اے ابو ذر تم کمزور آدمی ہو اور حکومت کا منصب ایک امانت ہے۔ حضور ﷺ کا ارشاد ہے جو شخص ہماری حکومت کے کسی منصب پر فائز ہو اگر بیوی نہ رکھتا ہو تو شادی کرے، اگر خادم نہ رکھتا ہو تو ایک خا دم حا صل کر لے اگر گھر نہ رکھتا ہو تو ایک گھر لے لے ، اگر سواری نہ رکھتا ہو تو ایک سواری لے لے ۔ اس سے آگے جو شخص قدم بڑھاتا ہے وہ خائن یا چو ر ہے۔حضرت ابو بکر ؓ فر ماتے ہیں جو شخص حکمران ہو اس کو سب سے زیادہ بھاری حساب دینا ہوگا اور وہ سب سے زیادہ سخت عذاب کے خطرے میں مبتلا ہوگا ۔ سورۃ الحج میں ارشاد ہے یہ وہ لوگ ہیں جنہیں اگر ہم زمین میں اقتدار بخشیں تو وہ نماز قائم کریں گے اور زکواۃ دیں گے اور نیکی کاحکم دیں گے اور بدی سے روکیں گے۔حضرت عمرؓ اپنی ایک تقریر میں بیان کرتے ہیں کہ بیت المال میں خلیفہ کا کیا حق ہے ۔ میرے لئے اللہ کے مال میں سے اسکے سوا کچھ حلال نہیں کہ ایک جوڑا کپڑاگرمی کے لئے اور ایک جا ڑے کے لئے اور قریش کے ایک اوسط آدمی کے برابر اپنے گھر والوں کے لئے لے لوں۔

متعلقہ خبریں