Daily Mashriq


مشرقیات

مشرقیات

حضرت ابو قلابہؒ فرماتے ہیں: ’’مجھے بہت تنگی کا سامنا کرنا پڑا۔ ایک دن صبح ایسی بارش ہوئی گویا کہ مشکیزوں کے منہ کھول دئیے گئے ہوں۔ بچے بھوک سے بلبلا رہے تھے اور میرے پاس ایک دانہ غلہ نہ تھا۔

میں بہت پریشان تھا۔ باہر نکل کر اپنی دہلیز پر بیٹھ گیا اور دروازہ کھلا ہوا چھوڑ دیا اور اپنے فقر وفاقہ کے بارے میں سوچنے لگا۔

جس مشکل سے میں گزر رہا تھا ممکن تھا کہ اس کی وجہ سے میرا دل پھٹ جاتا کہ اچانک مجھے ایک خاتون بہت عمدہ گدھے پر نظر آئی۔ خادم نے اس کے گدھے کی لگام کو پکڑا ہوا تھا جو پانی میں بھیگ رہا تھا۔ جب وہ بالکل میرے گھر کے سامنے آیا تو سلام کیا اور پوچھا:

’’ابو قلابہ کا گھر کہاں ہے؟‘‘

میں نے کہا:

’’میں ہی ابو قلابہ ہوں اور یہ میرا گھر ہے۔‘‘

اس خاتون نے مجھ سے ایک مسئلہ دریافت کیا تو میں نے بتا دیا۔ اتفاق سے وہ فتویٰ اس کی مرضی کے مطابق تھا۔ لہٰذا اس نے ایک کپڑے کا تھیلا نکالا اور اس میں سے مجھے تیس دینار دئیے۔

حق تعالیٰ مشکل کشا ہے وہ انسان کیلئے راستہ پیدا کر دیتا ہے۔

قاضی تنوخیؒ فرماتے ہیں: ’’ایک مصنف بہت فقیر ہو گیا اور بے کار رہنے لگا۔ یہاں تک کہ اس کے پاس کچھ بھی نہ بچا اور قریب تھا کہ مانگنے لگتا۔ اسی حال میں وہ گھر سے نکلا اور کچھ دنوں بعد اپنے سفر سے واپس لوٹا تو میں اس کے پاس گیا۔

میں نے کہا: ’اب تمہارا کیا حال ہے؟‘‘

تو اس نے یہ اشعار پڑھے:ترجمہ ’’جیسا کہ آپ ہمیں دیکھ رہے ہیں‘ ہم بالکل صحیح سالم ہیں اور ہماری سلامتی کو کوئی نقصان نہیں پہنچا۔ آپ کسی چیز کو یا تو پسند کرتے ہیں یا پھر ناپسند کرتے ہیں مگر یہ نہیں جانتے کہ کس چیز میں خیر ہے۔‘‘چنانچہ اس کی دل جوئی کی اور اس کو تسلی دی اور کچھ دن وہیں رہا۔

چنانچہ اس کی کچھ آمدنی ہونے لگی تو وہ خراسان چلا گیا اور بہت برسوں تک ہمیں اس کی کوئی اطلاع نہ ملی۔ایک دن اچانک وہ ہمارے شہر ایک بڑا لیڈر بن کر آیا کہ اس کے پاس بہت سے جانور‘ گھوڑے‘ گدھے‘ اونٹ‘ خادم‘ گھر کا سامان‘ بہت سا نقد مال اور کپڑے تھے۔

میں اس کے پاس گیا اور اس کو مبارکباد دی تو اس نے کہا:

’’خدا کا شکر کہ میری پریشانی راحت میں بدل گئی۔ آج کے بعد تم مجھے کوئی کام تلاش کرتے نہیں دیکھو گے۔ پھر اس نے وہ چیزیں بیچ دیں جو وہ لے کر آیا تھا۔ ان میں صرف وہ چیزیں چھوڑیں جو ایک صاحب مروت کیلئے ضروری ہوتی ہیں اور مال میں سے بیس ہزار درہم کی زمینیں خریدیں اور اپنے گھر اور جائیداد میں مصروف ہوگیا۔‘‘

متعلقہ خبریں