Daily Mashriq


الیکشن کمیشن سرکاری ملازمین کے حقیقی تبادلے کروائے

الیکشن کمیشن سرکاری ملازمین کے حقیقی تبادلے کروائے

ہمارے نمائندے کے مطابق بہتر کارکردگی یا کسی کا نظرکرم، خیبر پختونخوا میں کئی سینئر بیوروکریٹس تبادلوں کے ریلے سے ہی نہیں بچے بلکہ سابق حکومت میں زیرعتاب رہنے والے افسران کو نگران حکومت میں بھی حالیہ تبادلوں اور تقرریوں میں نظرانداز کرکے جانبداری کا مظاہرہ سامنے آیا ہے۔ روایت بھی یہی رہی ہے کہ نگران دور میں ان افسران کو اہم عہدوں پر تعینات کیا جاتا ہے جو یا تو اپنی شرافت اور اصول پسندی یا پھر سفارش اور رشوت دینے کی استطاعت نہ رکھنے کے باعث غیراہم عہدوں پر ہی تعینات چلے آتے ہیں۔ اس قسم کے افسران ہی کو بے ضرر اور غیرجانبدار قرار دیا جاسکتا ہے مگر اس مرتبہ خیبر پختونخوا میں نگران حکومت کی جانب سے کئے جانے والے تبادلوں میں ان کو بری طرح نظرانداز کیا گیا اور دو ماہ کے نگران دور ہی میں سہی ان کی اچھی پوسٹنگ کی نوبت نہ آسکی۔ المیہ یہ ہے کہ خیبر پختونخوا میں ہونے والے اس قسم کے تبادلوں کی الیکشن کمیشن سے بھی منظوری آگئی حالانکہ الیکشن کمیشن کو اس کا نوٹس لینا چاہئے تھا۔ اگر صوبے میں شکوک وشبہات سے بالاتر انتخاب مطلوب ہے تو اب بھی اس غلطی کا ازالہ کرنے کی گنجائش ہے بصورت دیگر خیبر پختونخوا میں اسے پری پول دھاندلی سمجھنے والوں کے الزامات سے چھٹکارا ممکن نہیں اور نہ ہی انتخابی نتائج کو تسلیم نہ کرنے والوں کو روکنا ممکن ہوگا۔ بہتر ہوگا غیر جانبدارانہ فیصلے کرتے ہوئے دیگر صوبوں میں ہونے والے تبادلوں کی تقلید کی جائے اور خواہ مخواہ کا ایشو نہ بننے دیا جائے۔

متعلقہ خبریں