Daily Mashriq


فاٹا میں گیس ذخائر کی دریافت ؟

فاٹا میں گیس ذخائر کی دریافت ؟

جیو لاجیکل سیسمک سروے میں ہونے والے انکشاف کے مطابق قبائلی علاقہ جات (فاٹا) کے مختلف علاقوں سے 20ٹریلین مربع فٹ تک قدرتی گیس کے ذخائر حاصل ہونے کی توقع ہے ۔ جہاں تک قبائلی علاقہ جات میں موجود قدرتی وسائل کا تعلق ہے یہ امر کسی سے پوشیدہ نہیں کہ ان علاقوں کو اللہ رب العزت نے بے پناہ وسائل عطا فرمائے ہیں ، قیمتی پتھر وں کے ساتھ نیم قیمتی پتھر جن میں ہیرے جواہرات سونے چاندی ، تانبا ، گرینائیٹ ، سیمنٹ ، ٹائیلز ، چپس وغیرہ کے علاوہ دیگر کئی اقسام کے پتھر وں کے پہاڑ وں سے یہ علاقے ائے پڑے ہیں ۔ اسی طرح گرگری اور کوہاٹ میں گیس کے ذخائر سے استفادہ پہلے ہی کیا جا رہا ہے جبکہ اب جیو لاجیکل سیسمک سروے میں قبائلی علاقوں کے کئی مقامات سے بھی قدرتی گیس کے 20ٹریلین مکعب فٹ کے ذخائر ملنے سے یقینا نہ صرف ملک میں گیس کی کمی بہت حد تک پوری ہو جائے گی بلکہ گیس کے ساتھ پٹرول اور اس کے بائی پراڈکٹس بھی نکلتے ہیں ۔ جو یقینا خوش آئند امر ہے اور اسے اللہ رب العزت کا تحفہ ہی قرار دیا جانا چاہیے ، تاہم ضرورت اس امرکی ہے کہ پٹرولیم مصنوعات کو صفائی کے عمل سے گزار نے کے لئے ریفائنری گیس فیلڈ کے جس قدر قریب ممکن ہو قائم کرنے پر توجہ دینی چاہیے ، کیونکہ گرگری فیلڈ اور کوہاٹ کے گیس فیلڈ سے ملنے والی پٹرولیم مصنوعات کے لئے ماہرین کے مطالبات کے باوجود ریفائنری کے قیام میں ٹال مٹول سے کام لیا جا رہا ہے ۔ جبکہ عوامی سطح پر بھی یہ مطالبہ کیا جا رہا ہے تاکہ علاقے کے لوگوں سے ہزاروں میل دور جانے یاملک سے باہر رزق کی تلاش کے لئے جانے پر مجبور نہ ہوں ، اس لئے محولہ مقامات سے ملنے والی گیس کے ساتھ ملنے والی پٹرولیم مصنوعات کو کار آمد بنا نے کے لئے ریفائنری کے قیام کی ذمہ داری ان کمپنیوں کو سونپی جائے جو ان مقامات میں ڈرلنگ کے ٹھیکے حاصل کر نے کیلئے پیشکشیں جمع کرائیں ۔ یا پھر دوسرا کوئی مناسب راستہ اختیار کیا جائے ، تاکہ مقامی بے روزگارلوگوں کو حصول رزق میں آسانیاں فراہم ہو سکیں ، امید ہے وزارت پٹرولیم و گیس ان گزارشات پر بھر پور توجہ دے گی اور فاٹا کے عوام کو اپنے قدرتی وسائل سے استفادہ کرنے کا موقع دے گی ۔

متعلقہ خبریں