Daily Mashriq

خیبرپختونخوا کی لڑکیوں کے نام ایک اور اعزاز

خیبرپختونخوا کی لڑکیوں کے نام ایک اور اعزاز

سپورٹس نیوز:(محمد عادل ملال) ضلع مردان سے تعلق رکھنے والی ایک با ہمت لڑکی ماریہ ضیاء نے خیبرپختونخوا کے پہلے خاتون سپورٹس فیزیو تھراپسٹ ہونے کا اعزاز حاصل کر لیا۔ ماریہ ضیاء اس وقت صوبے کے سب سے بڑے سپورٹس کمپلکس قیوم سٹیڈیم میں بطور سپورٹس فیزیو تھراپسٹ اپنی خدمات سرانجام دے رہی ہیں۔

قیوم سٹیڈیم میں تقریبا گیارہ سو کے قریب رجسٹر کھلاڑی مختلف کھیلوں کی تر بیت حاصل کر رہے ہیں۔ ماریہ ان تمام کھلاڑیوں کو ان کے کھیل کے مطابق ایکسرسائز سکھاتی ہیں اور انکو مقابلوں کیلئے تیار کرتی ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ وہ کھیل کے دوران آنے والے انجریز کو دیکھنے کے لیے بھی ہمہ وقت تیار رہتی ہیں۔

مشرق نیوز سے بات چیت کرتے ہوئے ماریہ ضیاء کا کہنا تھا کہ ان کا شروع ہی سے اس طرف رجحان تھا۔ کہ اپنے صوبے کیلئے کچھ کریں۔ اپنے اس خواب کو عملی جامہ پہنانے کے لیےاس نے خیبر میڈیکل یونیورسٹی سے ڈاکٹر آف فیزیوتھراپی کی ڈگری حا صل کی۔ اور بعد میں ریفا انٹر نیشنل یونیورسٹی اسلام آباد سے سپورٹس فیزیوتھراپی میں سپیشلا ئیزیشن حاصل کی۔

ماریہ ضیاء جو اس وقت صوبے کے باقی لڑکیوں کیلئے ایک مثال ہہیں، کہتی ہیں کہ سپورٹس فیزیو تھراپسٹ کی ضرورت ہر سپورٹس کپملیکس میں ہے، لہذا حکومت کو اس طرف توجہ دینی چاہیے۔ خیبرپختونخوا حکومت اگر کھلاڑیوں کو مواقع دینے کے ساتھ ساتھ سہولیات بھی فراہم کرے تو یہ عالمی سطح پر پاکستان کا نام روشن کرسکتے ہیں۔

متعلقہ خبریں