Daily Mashriq

پی ٹی آئی میں عثمان بزدار کو وزیر اعلیٰ کے عہدے سے ہٹانے کے مطالبات بڑھنے لگے

پی ٹی آئی میں عثمان بزدار کو وزیر اعلیٰ کے عہدے سے ہٹانے کے مطالبات بڑھنے لگے

ذرائع کے مطابق مذکورہ مسئلے کو پارٹی کے اہم حلقوں میں کئی مرتبہ اٹھایا گیا ہے.

لاہور: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) میں بھی ملک کے سب سے اہم صوبے کے معاملات نمٹانے میں ناکامی پر بڑھتے ہوئے تحفظات کی وجہ سے وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی تبدیلی کے مطالبات زور پکڑگئے ہیں۔

 رپورٹ کے مطابق پی ٹی آئی کے رہنما یوں تو عوامی سطح پر پنجاب کی حکومت کے خلاف کوئی بیان نہیں دیتے لیکن وہ پسِ پردہ انٹرویوز میں اعتراف کرتے ہیں کہ ان کی حکومت صوبہ پنجاب کو چلانے میں ناکام ہورہی ہے۔

پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما نےبتایا کہ ' ہاں، ہم عثمان بزدار کی اب تک کارکردگی سے غیرمطمئن ہیں اور پی ٹی آئی میں موجود اکثریت ایک بہتر اور سرگرم سیاسی شخصیت ان کے متبادل لانا چاہتی ہے لیکن سوال یہ ہے کہ : کیسے کیا جائے؟'۔

انہوں نے کہا کہ ' پارٹی میں دباؤ ڈالنے والےگروہ موجود ہیں اور اتحادیوں (پاکستان مسلم لیگ ق) کے مقاصد بھی اب چھپے نہیں رہے اور مطلوبہ تبدیلی لانے کے علاوہ کوئی راستہ نہیں ہے'۔

شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ پارٹی رہنماؤں جیسا کہ سابق سیکریٹری جنرل جہانگیر خان ترین، گورنر پنجاب چوہدری سروس، سابق صوبائی وزیر عبدالعلیم خان اور وزیر اطلاعات پنجاب میاں اسلم اقبال کے گروہ موجود ہیں۔

پارٹی رہنما نے کہا کہ اس صورتحال میں تمام گروہوں پر ایک پیج پر لانا اور اس عہدے کے لیے ایک نام پر اتفاق رائے پیدا کرنا بہت مشکل ہے۔

اسی طرح پاکستان مسلم لیگ(ق) کئی مواقع پر کہہ چکی ہے کہ اگر موجودہ وزیراعلیٰ کو ہٹادیا جائے تو وہ پنجاب میں پی ٹی آئی کی حکومت کی حمایت سے متعلق دوبارہ غور کریں گے۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی ) کی کور کمیٹی کا اجلاس گزشتہ روز اسلام آباد میں ہوا تھا جسں موجود ذرائع نے بتایا کہ مذکورہ مسئلہ پارٹی کے اہم حلقوں میں کئی مرتبہ اٹھایا گیا ہے۔

اس صورتحال میں تمام گروہوں پر ایک پیج پر لانا اور اس عہدے کے لیے ایک نام پر اتفاق رائے پیدا کرنا بہت مشکل ہے۔

متعلقہ خبریں