Daily Mashriq

پرویز مشرف کے امریکا کے ساتھ سمجھوتےکا نتیجہ آج ہمیں بھگتنا پڑ رہا ہے،خواجہ آصف

پرویز مشرف کے امریکا کے ساتھ سمجھوتےکا نتیجہ آج ہمیں بھگتنا پڑ رہا ہے،خواجہ آصف

ویب ڈیسک:وزیر خارجہ خواجہ آصف کا کہنا ہے کہ نائن الیون کے بعد اس وقت کی حکومت نے امریکا کے ساتھ بڑا سمجھوتہ کیا جس کا نتیجہ آج بھگتنا پڑ رہا ہے۔

امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن کے دورہ پاکستان سے سینیٹ کو آگاہ کرتے ہوئے وزیر خارجہ خواجہ آصف نے کہا کہ امریکا کے ساتھ تعلقات 70 سال پرانے ہیں اس لیے مناسب ہو گا کہ اس معاملے پر ایوان میں بحث ہو۔

خواجہ آصف نے کہا کہ گزشتہ دو ماہ کے دوران امریکا کا کوئی دباؤ قبول نہیں کیا اور پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ہوا ہے کہ پوری سیاسی و عسکری قیادت نے امریکی حکام کے ساتھ ایک ہی میز پر بیٹھ کر مذاکرات کیے جس دوران کسی کے بھی لہجے میں ذرا برابر ہچکچاہٹ نہیں تھی۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ افغانستان بھارت کے لیے سہولت کار کا کردار ادا کر رہا ہے جو پاکستان کے لیے ناقابل قبول ہے، افغانستان میں بھارت کا کردار کسی بھی صورت قبول نہیں کریں گے۔

ان کا کہنا تھاکہ افغانستان کے 45 فیصد علاقے پر داعش قابض ہے جب کہ طالبان کو اپنی منصوبہ بندی کے لئے پاکستان کی ضرورت نہیں۔

وزیر خارجہ خواجہ آصف نے کہا کہ امریکا نے پاکستان کو 75 دہشت گردوں کی فہرست فراہم کی جس میں حافظ سعید سمیت کسی بھی پاکستانی کا نام شامل نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ امریکا کی فراہم کردہ فہرست میں سے زیادہ تر مارے جا چکے ہیں جب کہ کچھ افغانستان میں طالبان کے شیڈو گورنر ہیں۔

متعلقہ خبریں