Daily Mashriq

مسودہ قانون، تمام فریقوں کو اعتماد میں لیا جائے

مسودہ قانون، تمام فریقوں کو اعتماد میں لیا جائے

قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد کرتے ہوئے خیبر پختونخوا حکومت کی جانب سے مدارس، فلاحی اور دیگر تنظیموں کی چندہ اور خیرات اکٹھے کرنے اور ان تنظیموں کے فنڈز کی جانچ پڑتال اور آڈٹ کیلئے قانونی مسودے کی تیاری اہم پیشرفت ہے جس پر عمل درآمد سے جہاں اندرونی طور پر چندہ مافیا کا چندہ اکٹھا کر کے اپنے مقاصد کیلئے استعمال کرنے کی حوصلہ شکنی اور روک تھام ہو سکے گی وہاں بین الاقوامی دنیا کے تحفظات دور کرنے کا یہ سنجیدہ اقدام ہوگا جس کی ضرورت تھی۔ قانونی مسودے کے مطابق منفی سرگرمیوں کیلئے فنڈز استعمال ہونے کی صورت میں متعلقہ مدرسہ یا تنظیم پر پابندی عائد کی جائے گی۔ مدارس اور تنظیموں کو پابند بنایا گیا ہے کہ وہ آمدن کے ذرائع اور فنڈز کے استعمال کی تفصیل حکومت کو فراہم کریں گی۔ قانونی مسودے میں چندے کی رقم کے استعمال کیلئے چیریٹی ٹرسٹ بنانے اور اخراجات وآمدن اور اس کے ذرائع کو ظاہر کرنے کی شرط بھی شامل ہے۔ ہم سمجھتے ہیں کہ جو مدارس اور فلاحی تنظیمیں کسی منفی سرگرمی میں ملوث نہیں اور وہ لوگوں کی امانت کا استعمال دیانتداری سے کرتے ہیں ان کو انتظامی طور پر مشکلات اور ایک اضافی کام انجام دینے اور تھوڑی سی زحمت کے علاوہ زیادہ فرق نہیں پڑے گا اور وہ اس کیلئے تیار بھی ہوں گے۔ ایسا کرنے کی صورت میں ان پر چندہ دینے والوں کا اعتماد بڑھے گا اور ان کے حوالے سے خواہ مخواہ کی غلط فہمیوں کا بھی ازالہ ہوگا۔ قانون سازی کے مرحلے میں جہاں ایوان کو اعتماد میں لیا جائے وہاں اس سے قبل فلاحی اداروں اور مدارس کے نمائندوں سے بھی تجاویز لی جائیں تاکہ ایک متفقہ اور سب کیلئے قابل قبول قانون سازی کی جا سکے۔

سپرفلڈ کا خطرہ پیشگی اقدامات میں تاخیر نہ کی جائے

اس سال سپرفلڈ کی پیشگوئی کی گئی ہے اور بے وقت بارشوں کے باعث موسمی صورتحال ویسے بھی غیریقینی ہوتی جا رہی ہے۔ اب مون سون بھی پہلے کی طرح برکھارت نہیں بلکہ باعث زحمت بنتی جا رہی ہے۔ ہر سال مون سون کے موقع پر بارشوں، طوفان اور سیلاب کی تباہ کاریاں معمول بن گئی ہیں۔ ہر سال ایسا ہی ہوتا ہے لوگ بے موت مرتے ہیں، غریبوں کے اثاثے پانی میں غرق ہو جاتے ہیں، کچے مکانوں کی دیواریں اور چھتیں بیٹھ جاتی ہیں، مویشی بہہ جاتے ہیں، بیماریاں پھوٹتی ہیں اور اگلے سال پھر یہی ہوتا ہے۔ جنگلات کی بڑے پیمانے پر تباہی میں ملوث عناصر اور ٹمبر مافیا کی سرگرمیاں بروقت روکی جائیں تو شاید وہ انسانی المیہ رونما نہ ہو جس سے ہم اس وقت دو چار ہیں۔ ہمارے ارباب اختیار کو کبھی تو یہ خیال آنا چاہئے کہ اس سالانہ تباہی کو روکنے کا بندوبست کریں جو امکان سے باہر نہیں ہے۔ نکاسی آب کے راستوں کو صاف رکھنا یوں بھی سارا سال ضروری ہے لیکن برسات میں یہ لازمی ہونا چاہئے۔ مخدوش اور کچے مکانات کی تعمیر کی اجازت نہیں دی جانی چاہئے اور پکے مکان بنانے کیلئے قرضے، نقشے اور نگرانی کا نظام وضع کیا جانا چاہئے۔ این ڈی ایم اے اور پی ٹی ایم کا کام اب بس اتنا ہی رہ گیا ہے کہ وارننگ جاری کر دی جاتی ہے، بروقت وارننگ کا اجراء احسن ضرور ہے لیکن وارننگ کیساتھ ساتھ امدادی نظام کو بھی موثر بنایا جانا چاہئے۔

منظم دھندہ کرنے والے گروہوں کیخلاف کارروائی کی ضرورت

بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے نام پر شہریوں کو لوٹنے کا دھندہ ایک منظم کاروبار کی صورت اختیار کر گیا ہے، کوشش کے باوجود اس کی روک تھام نہیں ہو پاتی ایسا کرنا مشکل کام ضرور ہے لیکن جن فون نمبروں سے جعلی کال کر کے سادہ لوح لوگوں کو لوٹنے کا حربہ استعمال کیا جاتا ہے ان نمبروں کے حاملین کیخلاف کارروائی کوئی زیادہ مشکل کام بھی تو نہیں۔ اگرچہ اس ضمن میں بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کی طرف سے باربار وضاحتیں کی جاتی رہیں لیکن نوسرباز کچھ اس قسم کی شاطرانہ چالیں چلتے ہیں کہ سادہ لوح افراد ان کی جال میں پھنس ہی جاتے ہیں۔ اس میں انکم سپورٹ کارڈ رکھنے والے بھی شامل ہیں جنہیں ادائیگی کے نام پر لوٹا جاتا ہے۔ ان عناصر کیخلاف ایف آئی آر اور متعلقہ موبائل کمپنیاں بآسانی کارروائی کر سکتی ہیں جس میں غفلت کے ارتکاب کا پی ٹی اے کو نوٹس لینا چاہئے۔ بینظیر انکم سپورٹ کے نام پر یا پھر دیگر چھوٹی بڑی وجوہات بنا کر اور طریقہ کار اختیار کر کے لوٹ مار کی کامیاب کوششوں کو روکا جاتا تو دیدہ دلیر عناصر کریڈٹ کارڈز کے پاس وارڈ اور کوائف لیکر اکاؤنٹ خالی نہ کر پاتے۔ ہمارے تئیں اس منظم گروہ میں ایزی لوڈ کا کاروبار کرنے والے بعض افراد بھی ملوث ہوگئے ہیں جن کا کھوج لگایا جانا چاہئے۔ جس طرح بیرون ملک سے اندرون ملک کے نیٹ ورک سے کال آنے پر باقاعدہ نمبر پر اطلاع دینے کا نظام وضع کر کے اس کی روک تھام کی سنجیدہ سعی کی گئی تھی۔ پی ٹی اے ہر قسم کی جعلی کالوں اور ایس ایم ایس ملنے کی شکایت کی اطلاع کیلئے اس طرز کا نظام وضع کرے تاکہ جعلسازی کی روک تھام کی جاسکے۔

متعلقہ خبریں