Daily Mashriq

نتھیا گلی میں گورنر، وزیراعلیٰ ہاؤس سمیت 4 ریسٹ ہاؤسز عوام کیلئے کھول دیے گئے

نتھیا گلی میں گورنر، وزیراعلیٰ ہاؤس سمیت 4 ریسٹ ہاؤسز عوام کیلئے کھول دیے گئے

پشاور: حکومت خیبر پختونخوا نے نتھیا گلی میں قائم گورنر ہاؤس اور وزیراعلیٰ ہاؤس سمیت اپنے 4 ریسٹ ہاؤسز عام عوام کی بکنگ اور رہائش کے لیے کھول دیے۔

وزیراعظم عمران خان نے سماجی روابط کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک فضائی ویڈیو پوسٹ کرتے ہوئے لکھا کہ ’ نوآبادیاتی نظام کی یہ نشانیاں جن کی دیکھ بھال پر ٹیکس دہندگان کے پیسوں سے سالانہ کروڑوں روپوں کے اخراجات آتے تھے، اب حکومت کے لیے آمدن کا ذریعہ بنیں گے‘۔

نوآبادیات کی یہ نشانیاں جن کی دیکھ بھال کیلئے ٹیکس کے پیسوں سے سالانہ کروڑوں کے اخراجات اٹھتے، اب حکومت کیلئے آمدن کا ذریعہ بنیں گے۔

 اس ضمن میں سینئر صوبائی وزیر برائے سیاحت اور کھیل عاطف خان نے  بتایا کہ ان کے محکمے نے کارروائی مکمل کرلی ہے اور اب عام ریسٹ ہاؤس میں بکنگ کروا سکتے ہیں۔

کھولے گئے دیگر ریسٹ ہاؤس میں پولیس ہاؤس اور کرنک ہاؤس بھی شامل ہیں جن کی بکنگ ٹورازم کارپوریشن خیبرپختونخوا کی ویب سائٹ پر کروائی جاسکتی ہے۔

ویب سائٹ پر میسر معلومات کے مطابق گورنر ہاؤس میں رہائش کے چارجز 40 ہزار روپے، وزیراعلیٰ ہاؤس میں 24 ہزار روپےجبکہ پولیس ہاؤس اور کرنک ہاؤس میں 18 ہزار سے شروع ہوتے ہیں۔

تاہم اس فہرست میں اسپیکر ہاؤس کا کہیں ذکر موجود نہیں جس کے بارے میں بھی عوام کے لیے کھولے جانے کا اعلان کیا گیا تھا۔

صوبائی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ وہ رفتہ رفتہ صوبے میں موجود 174 سرکاری ریسٹ ہاؤس کھولنے کا ارادہ رکھتے ہیں، اس سلسلے میں اگلے مرحلے میں47 جبکہ اس کے بعد والے مرحلے میں100 ریسٹ ہاؤس کھولے جائیں گے۔

عاطف خان کا مزید کہنا تھا کہ تمام سرکاری ریسٹ ہاؤسز کو عوام کے لیے کھولنے میں کچھ وقت لگے گا کیوں کہ اس سے پہلے ان عمارتوں کو رہنے کے قابل بنانا ہے لیکن اس مقصد کے لیے محمکہ سیاحت کو عملے کی کمی کا سامنا ہے جس کے باعث ان ریسٹ ہاؤسز کی تزئین و آرائش چیلنج بنا ہوا ہے۔

رہائش کی بلند قیمتوں کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ حکومت ریونیو کمانا چاہتی ہے اور ان مقامات کو عوام کے لیے مفت نہیں رکھا جاتا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’حکومتی نقطہ نظر سے بلند قیمتیں بری نہیں اچھی ہیں کیوں کہ اس سے مالدار صارفین راغب ہوں گے اور آمدنی میں مستحکم اضافہ ہوگا۔

خیال رہے کہ 9 اگست کو خیبر پختونخوا حکومت نے صوبائی کابینہ کے اجلاس میں صوبے کے تمام ریسٹ ہاؤس عوام کے لیے کھولنے کا فیصلہ کیا تھا۔

متعلقہ خبریں