Daily Mashriq

 ملک ریاض کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست مسترد

ملک ریاض کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست مسترد

راولپنڈی: انسداد بدعنوانی عدالت نے اراضی جعلسازی مقدمے میں پراپرٹی ٹائیکون ملک ریاض اور ان کے بیٹے علی ریاض کی ضمانت قبل از گرفتاری مسترد کرکے انہیں 15 اکتوبر کو آئندہ سماعت پر طلب کرلیا اور غیر حاضر ہونے کی صورت میں ناقابلِ ضمانت وارنٹ جاری کرنے کی تنبیہ بھی کی۔

ضمانت کی درخواست مسترد ہونے کے بعد اب انسداد بدعنوانی ادارے کے پاس اس کیس میں ملک ریاض اور ان کے بیٹے کو گرفتار کرنے کا اختیار ہے۔

اس حوالے سے پبلک پراسیکیوٹر شیخ استجاب نے بتایا کہ عدالت نے ضمانت کی درخواست اس لیے مسترد کی کہ نہ تو ملک ریاض اور نہ ہی ان کے بیٹے سماعت میں پیش ہوئے۔

قبل ازیں ملزمان کے وکیل زاہد بخاری نے جج رانا نثار احمد نے انسداد بدعنوانی عدالت کو یقین دہانی کروائی کہ ان کے موکل سماعت میں پیش ہوجائیں گے اور استدعا کی کہ ضمانت کی درخواست نہ مسترد کی جائے۔

دوسری جانب روات کے قریبی گاؤں کے رہائشی اور مقدمے مدعیان کے وکیل نے عدالت سے درخواست کی ملک ریاض کے وارنٹ گرفتاری جاری کیے جائیں۔

تاہم جج نے دونوں افراد کو 15 اکتوبر کو طلب کرتے ہوئے خبردار کیا کہ اگر وہ پیش نہ ہوئے تو ان کے وارنٹ گرفتاری جاری کردیے جائیں گے۔

خیال رہے کہ انسداد بدعنوانی کے ادارے نے بحریہ ٹاؤن اور پنجاب کے محکمہ ریونیو کے کچھ عہدیداران کے خلاف گاؤں کے رہائشیوں کی درخواست پر مقدمہ درج کیا تھا۔

درخواست کے مطابق ملک ریاض اور ان کے بیٹے نے جعلی دستاویزات پر ’شاملات‘ یا برادری کی ایک ہزار 401 کنال زمین اپنے نام کرنے کے لیے مبینہ طور پر ریونیو حکام کو رشوت دی۔

مذکورہ اراضی جعل سازی کیس 2012 میں انسداد بدعنوانی کے ادارے(اے سی ای) اور قومی احتساب بیورو (نیب) کے مابین ایک سال ک جاری قانونی جنگ کے بعد احتساب عدالت منتقل ہوا تھا۔

متعلقہ خبریں