Daily Mashriq

گلیات اور کاغان ڈوپلپمنٹ اتھارٹی محکمہ سیاحت کے سپرد کیلئے سمری ارسال

گلیات اور کاغان ڈوپلپمنٹ اتھارٹی محکمہ سیاحت کے سپرد کیلئے سمری ارسال

پشاور(محمد فہیم )محکمہ بلدیات خیبر پختونخوا نے گلیات اور کاغان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کا انتظام محکمہ سیاحت کے سپرد کرنے کیلئے وزیر اعلیٰ محمود خان کو سمری ارسال کر دی ہے جبکہ گلیات ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے قانون میں 7ترامیم اور کاغان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کیلئے نیا قانون بھی تجویز کیا گیا ہے جنہیں صوبائی ایوان سے منظور کرایا جائیگا ۔ وزیر اعظم عمران خان کی جانب سے گلیات ڈویلپمنٹ اتھارٹی اور کاغان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کا انتظامی اختیار محکمہ سیاحت کے سپرد کرنے کے احکامات کے بعد خیبر پختونخوا حکومت نے دونوں اتھارٹیز کے انتظامی اختیارات کی منتقلی کیلئے تمام کاغذی کارروائی مکمل کر لی ہے ذرائع کے مطابق خیبر پختونخوا لوکل گورنمنٹ الیکشن اینڈ رورل ڈویلپمنٹ کے رولز میں ترمیم کرتے ہوئے گلیات اور کاغان ڈویلپمنٹ اتھارٹیز کو ان سے نکال دیا جائیگا اسی طرح محکمہ سیاحت و ثقافت کے رولز میں ترمیم کرتے ہوئے دونوں اتھارٹیز کو ان میں شامل کیا جائیگا ۔گلیات ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے ایکٹ میں بھی ترمیم کا مسودہ تیار کر لیا گیا ہے جس کے مطابق قانون میں 7ترامیم کی جائیں گی پہلی ترمیم کے مطابق اتھارٹی کی جانب سے ہزارہ ڈویژن میں سیاحت کے فروغ کیلئے خصوصی توجہ دی جائیگی دوسری ترمیم کے مطابق سیکشن 2میں محکمہ سیاحت سے متعلق اضافہ کیا جائیگا تیسری ترمیم کے مطابق سیکشن 4میں اتھارٹی کے ارکان کی تعداد برقرار رکھتے ہوئے اس کی نمائندگی تبدیل کر دی گئی ہے مجوزہ قانونی مسودے کے مطابق اب اتھارٹی کے 11ارکان میں 2مقامی ارکان صوبائی اسمبلی بھی شامل ہونگے جبکہ پرائیویٹ ارکان کی تعداد 7سے کم کر کے 5کردی گئی ہے اسی طرح سرکاری ارکان کی تعداد 4برقرار رکھی گئی ہے۔ سیکشن 6میں ترمیم کرتے ہوئے اتھارٹی کی ذمہ داریوں میں اضافہ کردیا گیا ہے اور اب اتھارٹی سیاحت کے فروغ ، سیاحوں کو راغب کرنے کیلئے نئے اقدامات، ٹور سٹ ویب پورٹل کی تیاری اور سیاحت کی ترویج کیلئے بھی کام کریگی جس میں اتھارٹی کو تمام متعلقہ صوبائی محکموں کی حمایت حاصل رہے گی۔ سیکشن 7میں ترمیم تجویز کرتے ہوئے فیسوں اور جرمانوں کی وصولی کا اضافہ کیا گیا ہے جبکہ سیکشن 9میں ترمیم کرتے ہوئے اب اتھارٹی کو مالی، تکنیکی اور مشاورتی کمیٹیوں کے ساتھ ساتھ اتھارٹی کو ایک سیاحتی کمیٹی بھی قائم کرنی ہوگی۔ سیکشن 32کو تبدیل کرتے ہوئے اتھارٹی کے فیصلوں کو چیلنج کرنے کا اختیار شہریوں کو دے دیا گیا ہے اتھارٹی کے فیصلوں کو 30روز کے اندر انتظامی سیکرٹری کے سامنے چیلنج کیا جا سکے گا اور وہ 120روز کے اندر فیصلہ کرنیکا پابند ہوگا جبکہ انتظامی سیکرٹری کا فیصلہ بھی ہائی کورٹ میں چیلنج کیا جا سکے گا۔ ذرائع کے مطابق کاغان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کیلئے بھی قانونی مسودہ تیار کر لیا گیا ہے جس کے مطابق اتھارٹی 10ارکان پر مشتمل ہو گی جن میں 5ارکان کا تعلق نجی شعبے سے ہوگاتحصیل بالا کوٹ سے ایک ایم پی اے اور 4حکومتی ارکان بورڈ کا حصہ ہونگے ۔

متعلقہ خبریں