ریلوے خسارہ کیس:سپریم کورٹ کا6 ہفتوں میں محکمے کی آڈٹ رپورٹ پیش کرنے کا حکم

28 اپریل 2018 (17:23)

ویب ڈیسک: سپریم کورٹ کیجانب سے ریلوے کے خسارے کا آڈٹ کروا کر 6 ہفتوں میں رپورٹ   پیش کرنے کا حکم دے دیاگیا۔

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں محکمہ ریلوے میں اربوں روپے خسارے سے متعلق ازخود نوٹس کی سماعت میں  چیف جسٹس کے حکم پر وزیر ریلوے سعد رفیق پیش ہوئے۔ عدالت نے ریلوے خسارے کا آڈٹ کرا کے 6 ہفتے میں رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیدیا۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس نے کہا کہ چاہتے ہیں ایسا نظام وضع کر کے جائیں تا کہ کوئی من مانی نہ کر سکے۔ چیف جسٹس کے حکم پر وزیر ریلوے سعد رفیق پیش ہوئے تو انھوں نے کہا کہ آپ ہمارے قابل احترام چیف جسٹس ہیں جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ اپنے جملے میں سے قابل احترام کا لفظ نکال دیں، عدالت میں قابل احترام کہنے سے آپ کی بات میں تضاد محسوس ہوتا ہے، قابل احترام عدالت کےاندر کہا جائے تو باہر بھی سمجھا جائے؟

خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ ریلوے کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کیلئے بڑی محنت کی ہے، انھوں نے چیف جسٹس کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ کے اقدامات کی وجہ سے صرف عوام کو نہیں بلکہ حکومت کو بھی ریلیف ملا ہے۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ اضافی سیکیورٹی سرکاری خزانے سے دی گئی تھی، واپس کروا لی ہے، انھوں نے ریلوے خسارے کا 6 ہفتوں میں آڈٹ کروانے کا حکم دیتے ہوئے وزیر ریلوے کو کہا کہ آڈٹ رپورٹ ٹھیک آنے کے بعد تعریف بھی کریں گے۔

مزیدخبریں