Daily Mashriq

پاکستان اور بھارت سرحد پار کارروائیاں بند کریں، امریکا

پاکستان اور بھارت سرحد پار کارروائیاں بند کریں، امریکا

واشنگٹن: امریکا نے پاکستان اور بھارت پر زور دیا ہے کہ سرحد کے دونوں اطراف تمام کارروائیاں روک دی جائیں، اس سے قبل امریکا کی جانب سے دنیا کو خبردار کیا تھا کہ خطے میں مزید فوجی کارروائیوں کا خطرہ ناقابلِ قبول حد تک بڑھ چکا ہے۔

واشنگٹن میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کی ترجمان کا کہنا تھا کہ ’امریکا نے بھارت اور پاکستان سے سرحد پار کارروائیوں روکنے اور استحکام کی طرف لوٹنے کا مطالبہ کیا ہے‘۔

قبل ازیں وائٹ ہاؤس کی نیشنل سیکیورٹی کونسل (این ایس سی) نے خبردار کیا تھا کہ بھارت اور پاکستان کی جانب سے مزید فوجی کارروائیوں کا خطرہ بے انتہا زیادہ ہے‘۔

یہ بھی پڑھیں: بھارتی جارحیت: ترکی نے پاکستان کی غیرمشروط حمایت کا اعلان کردیا

امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ ’ہم دونوں فریقین پر زور دیتے ہیں کہ صورتحال کی کشیدگی ختم کرنے کے لیے فوری اقدامات کیے جائیں گے۔

امریکی ترجمان نے 14 فروری کو پلوامہ میں بھارتی فوجی دستے پر ہونے والے حملے کو ’سرحد پار دہشت گردی‘ قرار دیا اور خبردار کیا کہ اس طرح کے حملوں سے ’خطے کی سلامتی کو سنگین خطرات لاحق ہیں‘۔

امریکی عہدیدار کا مزید کہنا تھا کہ ’ہم پاکستان سے ایک مرتبہ پھر مطالبہ کرتے ہیں کہ اقوامِ متحدہ کی سیکیورٹی کونسل کے وعدوں پر عمل کرتے ہوئے دہشت گردوں کی فنڈز تک رسائی ختم اور انہیں پناہ گاہیں فراہم کرنے سے گریز کیا جائے‘۔

اس سلسلے میں این ایس سی کے ایک عہدیدار کا کہنا تھا کہ امریکا کو دونوں ممالک کی جانب سے کی گئی کارروائیوں پر سخت تشویش ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ دونوں اطراف سے مزید فوجی کارروائیوں کے خطرات دونوں ممالک، ان کے ہمسایہ ممالک اور بین الاقوامی برادری کے لیے ناقابلِ قبول حد تک زیادہ ہیں‘۔

قبل ازیں امریکی سیکریٹری اسٹیٹ مائیک پومپیو نے بھارت اور پاکستان پر زور دیا تھا کہ براہِ راست رابطوں کو فوقیت دیں اور ’کسی بھی قیمت پر‘ کشیدگی میں مزید اضافے سے باز رہیں۔

امریکی سیکریٹری اسٹیٹ کی اپیل سے ظاہر ہوتا ہے کہ امریکی حکومت جنوبی ایشیا کی دونوں نیوکلیائی طاقتوں کے مابین کشیدگی ختم کروانے کی بھرپور کوشش کررہی ہے۔

مذکورہ اپیل پاکستان کی جانب سے بھارتی کی دراندازی کے بعد جوابی کارروائی میں 2 جنگی طیاروں کو گروانے کے بعد سامنے آئی، واضح رہے کہ بھارت طیاروں نے دو روز قبل 1971 کی جنگ کے بعد پہلی مرتبہ دراندازی کی تھی۔

ایک بیان میں مائیک پومپیو کا کہنا تھا کہ انہوں نے پاکستانی وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اور ان کی بھارتی ہم منصب سشما سوراج سے بات کی اور امریکا کی جانب سے مزید کارروائیوں سے گریز کا پیغام پہنچایا۔

دوسری جانب چین نے بھی پاک بھارت کشیدگی میں اضافے کو مدِ نظر رکھتے ہوئے دونوں ممالک پر مزید کارروائیوں سے گریز کرنے پر زور دیا تھا اور تنازعات کو بات چیت کے ذریعے حل کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

متعلقہ خبریں