Daily Mashriq

باڑہ ، نجی سکول کے پرنسپل اور طلباکا سپرنٹنڈنٹ کے خلاف احتجاج

باڑہ ، نجی سکول کے پرنسپل اور طلباکا سپرنٹنڈنٹ کے خلاف احتجاج

باڑہ (نمائندہ مشرق ) باڑہ اکا خیل میں نجی سکول کے مشتعل طلباء اور پرنسپل امتحانی ھال کے سپرنٹنڈنٹ کے نامناسب اور جارحانہ رویے کے خلاف سراپا احتجاج بن گئے ۔سکول پرنسپل عبدالسلام آ فریدی کی قیادت میں دو درجن سے زائد طلباء نے سپرنٹنڈنٹ عرفان اللہ دائوڑپر طلباء کو بے جا تنگ کرنے اور نقل کے نام پر طلباء کو بلیک میل کرنے کے الزامات عائد کئے ہیں ۔مظاہرین نے باڑہ پریس کلب کے احتجاجی مظاہرہ کیا بعد میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پرنسپل اور طلبا کا کہنا تھا کہ 26مارچ کو سپر نٹنڈنٹ عرفان دائوڑ نے میتھس کے پرچے کے دوران ایک طالب علم کی جیب سے موبائل سیٹ کو برآمد کرکے زمین پر پٹخ دیااور طالب علم کو ہال سے باہر نکال کر اسے غیر حاضر قرار دیا۔متاثرہ طالب علم نویدکے رشتہ دار جرگہ لے کر سپرنٹنڈنٹ کے پاس آئے تو اہوں نے طالب علم نوید کے رشتہ داروں پر پستول تان لیا۔واقعے کی اطلاع پشاور بورڈ کے چیئر مین کو تحریری طور دیدی گئی تاہم کوئی شنوائی نہیں ہوئی ۔طلباء اور پرنسپل نے سپرنٹنڈنٹ پر الزام لگایا کہ وہ طلبا کو ہال میں پی ٹی ایم کے جلسے میں شرکت کی دعوت دیتا رہا۔ان کا کہنا تھا کہ امتحانی ھال میں اسلحہ تان لینا اور طلباء کے ساتھ پرتشدد رویہ اختیار کرنا غنڈہ گردی ہے مذکورہ سپرنٹنڈنٹ کو فوری طور پر برطرف کیا جائے ۔ جب سپرنٹنڈنت عرفان اللہ دائوڑ سے رابطہ کیا گیا تو انہوںنے تمام الزامات کو مسترد کردیا۔انہوں نے کہا کہ نقل کرنے سے روکنے پر اس کے خلاف محاذ بنایاگیا ہے۔انہوںنے کہا کہ پی ٹی ایم سے ان کوئی تعلق نہیں ہے اور سکول پرنسپل صرف مجھے بدنام کرنے کی کوشش کر رہا ہے انہوںنے کہا کہ میں اپنی ڈیوٹی ایمانداری سیکروں گا اور کسی کی بلیک میلنگ میں آئوں گا ۔

متعلقہ خبریں