Daily Mashriq

پیمرا نے اینکرز کو ٹاک شوز میں ذاتی رائے دینے سے روک دیا

پیمرا نے اینکرز کو ٹاک شوز میں ذاتی رائے دینے سے روک دیا

اسلام آباد: پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) نے ٹیلی ویژن (ٹی وی) اینکرز کو ٹاک شوز کے درمیان اپنی ’ رائے‘ کے اظہار سے روکنے کی ہدایت کرتے ہوئے ان کا کردار ثالث(ماڈریٹر) تک محدود کردیا۔

پیمرا کی جانب سے باقاعدہ شوز کی میزبانی کرنے والے اینکرز کو اپنے اور دیگر چینلز کے ٹاک شور میں تجزیہ کار کی حیثیت سے شرکت نہ کرنے کی بھی ہدایت کی گئی ہے۔

علاوہ ازیں میڈیا ہاؤسز کو ٹاک شوز میں انتہائی احتیاط کے ساتھ اور متعلقہ موضوع سے متعلق اُن کے علم اور مہارت کو مد نظر رکھ کر مہمان منتخب کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

تمام سیٹلائٹ ٹی وی چینلز کو جاری کی گئی ہدایت میں کہا گیا کہ ’ ٹاک شوز کے شرکا/مہمانوں کو احتیاط سے منتخب کیا جائے، ان کی ساکھ منصفانہ اور غیر جانبدار تجزیہ کاروں کے طور پر ہو اور انہیں متعلقہ موضوع پر ضروری علم اور مہارت بھی حاصل ہو‘۔

پیمرا نے ہدایت میں کہا کہ ’پیمرا کے ضابطہ اخلاق کے مطابق اینکرز کا کردار پروگراموں کو بامقصد، غیرجانبدارانہ انداز میں چلانا ہے اور کسی بھی معاملے پر ان کی ذاتی رائے، جانبداری یا فیصلہ شامل نہیں ہوتا‘۔

ساتھ ہی یہ بھی کہا گیا کہ ’خصوصی ٹاک شوز کی میزبانی کرنے والے اینکرز اپنے یا دیگر چینلز کے ٹاک شوز میں کسی موضوع پر تجزیہ کار کے طور پر شریک نہ ہوں‘۔

پیمرا سے جاری ہدایت میں کہا گیا کہ ’ اسلام آباد ہائی کورٹ نے 26 اکتوبر کو جاری کیے گئے حکم میں شہباز شریف اور ریاست کے معاملے پر قیاس آرائیوں پر مبنی مختلف ٹی وی ٹاک شوز کا نوٹس لیا تھا، جس میں اینکر پرسنز نے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرتے ہوئے مذموم عزائم کے تحت عدلیہ اور اس کے فیصلے پر اثر انداز ہونے کی کوشش کی تھی‘۔

متعلقہ خبریں