Daily Mashriq

تاجر برادری کی ملک بھر میں دوسرے روز بھی ہڑتال، مارکیٹوں میں سناٹا  

تاجر برادری کی ملک بھر میں دوسرے روز بھی ہڑتال، مارکیٹوں میں سناٹا  

حکومت کی جانب سے سیلز ٹیکس کے نفاذ اور شناختی کارڈ کی شرط کے خلاف ملک بھر میں دوسرے روز بھی تاجروں کی ہڑتال جاری ہے۔

آل پاکستان انجمن تاجران اور فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کے درمیان مذاکرات ناکام ہونے کے بعد تاجروں نے ملک بھر میں 29 اور 30 اکتوبر کو ہڑتال کا اعلان کیا تھا جس کا آج دوسرا روز ہے۔

تاجر برادری کی ہڑتال کے بعد کراچی، حیدرآباد، کوئٹہ، خاران، پشاور، کوہاٹ، بنوں، سرگودھا، گوجرانوالہ، راولپنڈی اور ملتان سمیت ملک کے ہر چھوٹے بڑے شہر میں دکانیں اور مارکیٹیں بند اور کاروباری سرگرمیاں معطل ہیں۔

شناختی کارڈ کی شرط کیخلاف تاجروں کی ملگ گیر ہڑتال، حکومت سے پھر مذاکرات ناکام

تاجر رہنما عتیق میر کا کہنا تھا کہ ہم بھی پہلے صارف اور اس کے بعد تاجر ہیں، پرچون کی سطح پر سیلز ٹیکس بہتر معیشت میں بھی ممکن نہیں تھا۔

عتیق میر کا کہنا تھا کہ جو تاجر احتجاج کر رہے ہیں وہ ٹیکس دیتے ہیں، ٹیکس کا نظام آسان ہو گا تو مسئلے ختم ہو جائیں گے۔

ان کا کہنا تھا ایف بی آر نے کہا کہ تاجر ہمارا ہدف نہیں لیکن چھوٹے تاجروں کے خلاف کارروائیوں پر خوف کا ماحول بن گیا۔ہڑتال سے متعلق سوال پر عتیق میر نے کہا کہ ابھی تو پارٹی شروع ہوئی ہے، تفتیش اور سخت شرائط کی وجہ سے لوگ ٹیکس نیٹ سے نکل گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں