Daily Mashriq

پشاور کے مختلف علاقوں میں سمگل شدہ سگریٹ کی فروخت جاری

پشاور کے مختلف علاقوں میں سمگل شدہ سگریٹ کی فروخت جاری

پشاور(سٹی رپورٹر)سالانہ ساڑھے تین ارب روپے مالیت کی سگریٹ سمگل ہو رہی ہیں۔کیپٹل سٹی پولیس ،کسٹم ، ایکسائز اور متعلقہ اداروں کی غفلت کے باعث ساڑھے تین ارب روپے کے سمگل شدہ سگریٹ فروخت ہو رہے ہیں پاکستان میں دو بڑی کمپنیاں مقامی سطح پر سگریٹ بنا کر فروخت کر رہی ہیں جن سے حکومت کو سالانہ کروڑوں روپے کا ریونیو حاصل ہو تاہے مگر غیر ملکی سگریٹ کے فروخت سے ریونیو میں کمی آ رہی ہے سمگل شدہ سگریٹ میں دکاندار کوبھی زیادہ منافع ہوتا ہے سمگل شدہ سگریٹ ہشتنگری،حاجی کیمپ اڈہ ،کوہاٹ اڈہ ، چارسدہ بسسٹینڈ سمیت شہر کے مختلف بازاروں میں فروخت ہو رہی ہے۔ کارخانو مارکیٹ اور خیبرسے اس کی سمگلنگ گاڑیوں اور موٹرسائیکل و چنگ چی موٹرسائیکل سوارگنڈے مار اورخواتین کرتی ہیں۔ کسٹم حکام او رپولیس کی جانب سے پراسرار خاموشی اختیار کی گئی ہے ۔کسٹم حکام کی جانب سے خانہ پوری کے لئے کارروائی جاری ہے خیبر پختونخوا میں سب سے زیادہ سمگل شدہ سگریٹ کی فروخت ہو رہی ہے کسٹم حکام کے مطابق اسمگلنگ کے سگریٹ کے خلاف کریک ڈائون شروع کیا جارہا ہے۔

سگریٹ

متعلقہ خبریں