ڈیڑھ سو سال بعد سپر بلڈ مون افق پر نمودار،،،

ڈیڑھ سو سال بعد سپر بلڈ مون افق پر نمودار،،،

ویب ڈیسک:ڈیڑھ سو سال بعد  دنیا بھر میں انوکھا اور یادگار چاند گرہن رونما ہو گیا جسے ’سپر بلڈ بلیو مون‘ کا نام دیا گیا ہے۔

یہ منظر پاکستان کے کئی شہروں اور دیہاتوں میں دکھائی دے رہا ہے۔ اس مکمل چاند گرہن کی خاص بات یہ ہے کہ ایک جانب تو یہ مکمل چاند "بدر"ہے جسے چودھویں کا چاند بھی کہتے ہیں۔دوسری طرف عام حالات کے مقابلے میں 14فیصد بڑا دکھائی دینے والا یہ سپرمون بھی ہے اور ایسے چاند مکمل گرہن نہایت ہی دلفریب منظر پیش کر رہا ہے،گرہن لگنےسپر مون کو سرخی مائل دکھائی دینے پر اسے سپر بلڈ مون کہا جا رہا ہے۔

 تاریخی لحاظ سے چاند کو ایسی خوبصورت حالت میں 1866ء میں دیکھا گیا تھا۔

اسی بنا پر دنیا بھر کے ماہرِین فلکیات اور دیگر افراد نے بڑی بے تابی سے ان تاریخی لمحات کا انتظار کیا ،یہ چاند گرہن پاکستان سمیت مغربی شمالی امریکا، ایشیا، مشرقِ وسطیٰ اور روس کے علاقوں میں دیکھا جاسکے گا۔

31 جنوری کو پاکستان کے معیاری وقت کے مطابق چاند کو اس وقت گرہن لگنا شروع ہوا جب وہ افق پر نمودار بھی نہیں ہوا تھا تاہم پاکستان کے مختلف علاقوں میں لوگوں نے اسے اس وقت دیکھا جب چاند کو گرہن لگ چکا تھا۔

متعلقہ خبریں